ملائیشیا کا لازمی سزائے موت ختم کرنے کا فیصلہ | اردو میڈیا

admin
admin 10 جون, 2022
Updated 2022/06/10 at 1:00 شام
288267 023401 updates
288267 023401 updates

اس فیصلے کا اطلاق کب تک ہوگا یہ ابھی واضح نہیں / فائل فوٹوملائیشیا نے لازمی سزائے موت کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو اس وقت مختلف جرائم جیسے قتل، دہشتگردی  اور منشیات کی اسمگلنگ پر سنائی جاتی ہے۔اب ججز کی جانب سے ان جرائم کے مقدمات میں سزائے موت سے ہٹ کر بھی دیگر مناسب سزاؤں کا فیصلہ کیا جاسکے گا۔ملائیشین وزیر قانون وان جنیدی توانکو جعفر نے ایک بیان میں بتایا کہ ماہرین کی رپورٹ میں متبادل سزائیں تجویز کی گئی تھیں اور ان کا جائزہ لینے کے بعد حکومت نے لازمی سزائے موت والے 11 جرائم کے لیے متبادل سزاؤں پر غور کیا۔انہوں نے مزید بتایا کہ تمام تر جائزوں سے ثابت ہوا کہ حکومت کو تمام فریقین کے حقوق کا تحفظ یقینی بنانا چاہیے اور اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے لازمی سزائے موت پر نظرثانی کا فیصلہ کیا گیا۔خیال رہے کہ ملائیشیا میں سزائے موت کو ختم کرنے کا اعلان اکتوبر 2018 میں بھی ہوا تھا مگر اس کی منظوری سے قبل ہی حکومت ختم ہوگئی تھی۔اس وقت ملائیشیا میں 1300 سے زیادہ افراد کو سزائے موت دی جانی ہے جن میں سے بیشتر منشیات کی اسمگلنگ کے جرم میں گرفتار ہوئے۔اقوام متحدہ کے ماہرین کی جانب سے رکن ممالک پر زور دیا گیا ہے کہ سزائے موت بہت زیادہ سنگین جرائم پر ہی دی جانی چاہیے۔مگر ملائیشین وزیر قانون کے بیان میں یہ نہیں بتایا کہ کب تک سزائے موت کے خاتمے پر عملدرآمد شروع ہوگا یا اس کے متبادل کیا سزائیں دی جائیں گی۔

اس آرٹیکل کو شیئر کریں۔
ایک تبصرہ چھوڑیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

ہمارا فیس بک پیج لائک کریں۔

ہمارے فیس بک پیج کو لائک کرکے تازہ ترین اپڈیٹس حاصل کریں۔


This will close in 30 seconds

AllEscort