بلاول بھٹو کورونا وبا کے خلاف پاکستان کی حکمت عملی کے معترف

imran
imran 13 مئی, 2022
Updated 2022/05/13 at 6:25 صبح
627de0821e2e7
627de0821e2e7

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے خلاف سائنسی ثبوتوں اور منطقی بنیادوں پر پاکستان کا ردعمل مضبوط تھا۔

ڈان اخبار میں شائع رپورٹ کے مطابق وزیر خارجہ نے ان خیالات کا اظہار وائٹ ہاؤس کی میزبانی میں عالمی وبا کورونا پر عالمی سربراہی اجلاس میں ورچوئل خطاب کے دوران کیا۔

انہوں نے کہا کہ صحت کی حفاظت خصوصاً وبائی امراض کے اوقات میں ناقابل تفریق ہے، خوردبینی حیاتیات (وائرس پھیلانے والے جراثیم) قومی ریاستوں میں تفریق نہیں کرتے، ان کے لیے ہم سب ایک جیسے ہیں، ان کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمیں ایک ہو کر کام کرنا چاہیے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ صحت کے بحران سے نمٹنے کے لیے سائنسی ثبوتوں اور منطقی بنیادوں پر مظبوط ہونا لازمی ہے، ردعمل، نگرانی اور تشخیص وبائی امراض اور کمیونٹی میڈیسن کے قائم شدہ طریقوں کے مطابق ہونی چاہیے۔

وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ وبا کے خلاف پاکستان کا ردعمل ان اصولوں کے ساتھ شدید مطابقت رکھتا ہے، ہم نے ویکسینیشن، بوسٹر ڈوز اور انفیکشن سے بچاؤ کے مناسب اقدامات کو ترجیح دی۔

کورونا وبا کے دوران پاکستان کی مدد کرنے والی بین الاقوامی تنظیموں اور متعدد ممالک کے تعاون کا اعتراف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امریکا نے پاکستان کو 6 کروڑ 20 لاکھ ویکسینز فراہم کرنے میں فراخدلی کا مظاہرہ کیا۔

وزیر خارجہ نے دنیا کی 2 اہم طاقتوں کے ساتھ آسلام آباد کے متوازن تعلقات کو قائم رکھنے کی ضرورت پر بات کرتے ہوئے کہا کہ چین نے ہمیشہ سے ہماری بہت زیادہ مدد کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے بھی ان ممالک کو کرونا ویکسین فراہم کی جنہیں اس کی ضرورت تھی، انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ کورونا وبا انسانیت کے لیے ایک سنگین وقت اور انسانوں کے لیے حقیقی اہمیت کی عکاسی کا دور تھا۔

انہوں نے مستقبل میں بھی صحت کے بحرانوں پر بات چیت اور مختصر اور طویل مدتی حل تلاش کرنے کے لیے عالمی برادری پر زور دیا۔

اس آرٹیکل کو شیئر کریں۔
ایک تبصرہ چھوڑیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے